میرے چاروں طرف افق ہے جو ایک پردہء سیمیں کی طرح فضائے بسیط میں پھیلا ہوا ہے،واقعات مستقبل کے افق سے نمودار ہو کر ماضی کے افق میں چلے جاتے ہیں،لیکن گم نہیں ہوتے،موقع محل،اسے واپس تحت الشعور سے شعور میں لے آتا ہے، شعور انسانی افق ہے،جس سے جھانک کر وہ مستقبل کےآئینہ ادراک میں دیکھتا ہے ۔
دوستو ! اُفق کے پار سب دیکھتے ہیں ۔ لیکن توجہ نہیں دیتے۔ آپ کی توجہ مبذول کروانے کے لئے "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ پوسٹ ہونے کے بعد یہ آپ کے ہوئے ، آپ انہیں کہیں بھی کاپی پیسٹ کر سکتے ہیں ، کسی اجازت کی ضرورت نہیں !( مہاجرزادہ)

جمعہ، 7 مارچ، 2014

یسرنا القرآن

کائینات  کے خالق کے کن  کے امر کی لہریں  کائینات میں روز اوّل سے گردش کر رہی ہیں- 
 روح القدّس نے مُحَمَّد رَّسُولَ اللَّـهِ وَخَاتَمَ النَّبِيِّينَ کو اللہ کی طرف سے بتایا کہ،    الْقُرْآنَ ، الذِّكْرِ کے لئے ہے -

 وَلَقَدْ يَسَّرْنَا الْقُرْآنَ لِلذِّكْرِ فَهَلْ مِن مُّدَّكِرٍ ﴿54:17  

  اور حقیقتاً ہم   الذِّكْرِ کے لئے      الْقُرْآنَ آسان کرتے رہتے ہیں ، پس کوئی مُّدَّكِرٍمیں سے ہے ؟؟
یاد رہے  کہ ! اللہ کے ہاں ہماری پکڑ  عربی میں الکتاب کا فہم سمجھنے پر نہیں  ہو گی  !
بلکہ الکتاب میں دیئے  اللہ کے حکم پر عمل نہ کرنے پر ہو گی !
 ٭٭٭٭
برائے اطلاع عرض ہے !
کہ یہ ایک  بہترین دُعا ہے جو الکتاب کے شروع میں  ہے ۔اِس کے 36 الفاظ ، اُن کے  30 مادے  اور مادوں سے بننے والے اللہ کے 547 الفاظ ،کم از کم ایک اور زیادہ سے زیادہ  2،636 آئے ہیں ۔  یوں صرف اِن کی تعداد  الکتاب میں20،108 مرتبہ ہے ۔
 اِن کے علاوہ ، اللہ کے    1080 مادوں ، حروف اور ضمیر سے بننے والے  ۔تقریباً 14،166  الفاظ ہیں ۔ جو  الکتاب میں     77،701 الفاظ بن جاتے ہیں -

 وَلَقَدْ يَسَّرْنَا الْقُرْآنَ لِلذِّكْرِ فَهَلْ مِن مُّدَّكِرٍ ﴿54:17
   اللہ کی یہ آیات اپنی جگہ ایک اٹل  حقیقت  ہے  -  کہ    الذِّكْرِ کے لئے      الْقُرْآنَ آسان ہوتا رہتا ہے ۔ 
اِسی  آیت کو بنیاد بنا کر  ہم نے   ایک کوشش کی ہے ۔ جو ممکن ہے کہ آپ کو سمجھنے میں دشواری ہو ۔ ہم نے ایک مادے سے بننے والے ، الفاظ کا فہم ایک ہی لیا ہے ۔ خواہ وہ ایک بار الکتاب میں آیا ہو یا  2،636 بار -  جو یقیناً   آپ     کے لئے   کو  بنادے گا ، إِنْ شَاءَ اللَّهُ ۔
چنانچہ قرءت میں آپ جب بھی  اِن الفاظ کو سنیں گے تو آپ کے ذہن میں اللہ کی آیات کا ، اُمی فہم آتا رہے گا ۔
٭٭٭٭
 أعُوذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیطٰنِ الرَّجِیمِ (0)
بِسْمِ اللَّـهِ الرَّحْمَـٰنِ الرَّحِيمِ (1) الْحَمْدُ لِلَّـهِ رَبِّ الْعَالَمِينَ (2) الرَّحْمَـٰنِ الرَّحِيمِ (3) مَالِكِ يَوْمِ الدِّينِ (4) إِيَّاكَ نَعْبُدُ وَإِيَّاكَ نَسْتَعِينُ (5) اهْدِنَا الصِّرَاطَ الْمُسْتَقِيمَ (6) صِرَاطَ الَّذِينَ أَنْعَمْتَ عَلَيْهِمْ غَيْرِ الْمَغْضُوبِ عَلَيْهِمْ وَلَا الضَّالِّينَ (7)


پہلا لفظ       أَعُوذُ پر کلک کریں 







کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

خیال رہے کہ "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ !

افق کے پار
دیکھنے والوں کو اگر میرا یہ مضمون پسند آئے تو دوستوں کو بھی بتائیے ۔ آپ اِسے کہیں بھی کاپی اور پیسٹ کر سکتے ہیں ۔ ۔ اگر آپ کو شوق ہے کہ زیادہ لوگ آپ کو پڑھیں تو اپنا بلاگ بنائیں ۔