میرے چاروں طرف افق ہے جو ایک پردہء سیمیں کی طرح فضائے بسیط میں پھیلا ہوا ہے،واقعات مستقبل کے افق سے نمودار ہو کر ماضی کے افق میں چلے جاتے ہیں،لیکن گم نہیں ہوتے،موقع محل،اسے واپس تحت الشعور سے شعور میں لے آتا ہے، شعور انسانی افق ہے،جس سے جھانک کر وہ مستقبل کےآئینہ ادراک میں دیکھتا ہے ۔
دوستو ! اُفق کے پار سب دیکھتے ہیں ۔ لیکن توجہ نہیں دیتے۔ آپ کی توجہ مبذول کروانے کے لئے "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ پوسٹ ہونے کے بعد یہ آپ کے ہوئے ، آپ انہیں کہیں بھی کاپی پیسٹ کر سکتے ہیں ، کسی اجازت کی ضرورت نہیں !( مہاجرزادہ)

پیر، 30 ستمبر، 2019

لکھاری- ممبر- خالد مہاجرزادہ

 28 ستمبر  شام 7 بجے ، فیس بُک میسنجر  پر پیغام وصول ہوا :
" اتوار 30 ستمبر 3 بجے میرے گھر پر شگُفتہ نثر کی ایک محفل آراستہ ہو گی انشاء اللہ!
 تشریف لائیے مسلح ہو کر۔ آصف اکبر ، جے "
" جناب نیکی اور پُوچھ پُوچھ ، چشمِ ماروشن دلِ ماشاد  ۔خادم حاضر ہو جائے گا "  ۔ جواب دیا 
آشفتہ سری اور شگفتہ نثری   اپنے ہی گملوں  کی   قلمی  فصلیں ہیں   ۔ اِن  کے  جلو میں  حاضر نہ ہونا   کفرانِ نعمت میں شمار کیا جاسکتا ہے ۔ 
یوں مہاجرزادہ ، محفل مزاح نگارانِ قہقہہ آور میں تاکہ آصف اکبر  صاحب ،   قہقہے سننے کو ملیں -اب محفل مزاح نگارانِ قہقہہ آور میں پڑھے گئے مضامین - جن میں قہقے کم اور آپ بیتیاں اور جگ بیتیاں زیادہ ہیں-
 ٭٭سال 2018 ٭٭
نشت ماہ مضمون
1 9  بگھارے بینگن  
2 10 رنگروٹ سے آفیسر تک
3 11 بڑی بہن
4 12   شخصی آزادی کا آخری دن

 ٭٭سال 2019 ٭٭
نشت ماہ مضمون
5 1
6 2
7 3
8 4
9 5 smell- بمقابلہ بُو
10 6
11 7
12 8
13 9
14 10 برفی اور سر کی مالش
15 11
16 12

 ٭٭سال 2020 ٭٭
نشت ماہ مضمون
17 1
18 2
19 3
20 4
21 5 ایتھوپیائی نائی -کرونائی ماحول میں
22 6 گورکھے اکیڈمی میں
23 7
24 8
25 9
26 10
27 11
28 12

٭٭٭٭٭٭واپس جائیں٭٭٭٭٭٭

کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

خیال رہے کہ "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ !

افق کے پار
دیکھنے والوں کو اگر میرا یہ مضمون پسند آئے تو دوستوں کو بھی بتائیے ۔ آپ اِسے کہیں بھی کاپی اور پیسٹ کر سکتے ہیں ۔ ۔ اگر آپ کو شوق ہے کہ زیادہ لوگ آپ کو پڑھیں تو اپنا بلاگ بنائیں ۔