میرے چاروں طرف افق ہے جو ایک پردہء سیمیں کی طرح فضائے بسیط میں پھیلا ہوا ہے،واقعات مستقبل کے افق سے نمودار ہو کر ماضی کے افق میں چلے جاتے ہیں،لیکن گم نہیں ہوتے،موقع محل،اسے واپس تحت الشعور سے شعور میں لے آتا ہے، شعور انسانی افق ہے،جس سے جھانک کر وہ مستقبل کےآئینہ ادراک میں دیکھتا ہے ۔
دوستو ! اُفق کے پار سب دیکھتے ہیں ۔ لیکن توجہ نہیں دیتے۔ آپ کی توجہ مبذول کروانے کے لئے "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ پوسٹ ہونے کے بعد یہ آپ کے ہوئے ، آپ انہیں کہیں بھی کاپی پیسٹ کر سکتے ہیں ، کسی اجازت کی ضرورت نہیں !( مہاجرزادہ)

اتوار، 30 ستمبر، 2018

شگُفتگو- ممبر- ڈاکٹر عزیز فیصل

https://www.facebook.com/drazizfaisl
ڈاکٹر عزیز  فیصل  وہ  ہستی ہیں ، جنہوں نے محفل مزاح نگارانِ کی بیاد رکھنے کے لئے آصف اکبر صاحب کو تھپکی لگائی ۔   یوں دوستوں کو   ایسے ایسے اچھوتے نثر پاری اور مضامین سنے کو ملے ، بلکہ  اُن سے غنا و شعر   کی پھلجڑیاں بھی  چوتھی نشست میں تقسیم کروائی گئیں -
ڈاکٹر عزیز فیصل     اپنی تحریروں پر خود مسکراتے ہیں اور دوسروں کو اپنے مزاحیہ فلسفے سے ہنساتے بھی ہیں ۔  ( مہاجرزادہ)
اُن کےمحفل مزاح نگارانِ قہقہہ آور میں پڑھے گئے مضامین -
 ٭٭سال 2018 ٭٭
نشت ماہ مضمون
1 9
2 10
3 11 گھر کے پتے
4 12 اور ہم چپ ہی رہے

 ٭٭سال 2019 ٭٭
نشت ماہ مضمون
5 1
6 2 بدپرہیزی کے صارفین کے نام سے
7 3
8 4
9 5
10 6 تقی اللہ خان ہنس مکھ رنگساز
11 7
12 8 بدپرہیزی اور خوش خوراکی
13 9 ہور کیہہ حال اے؟
14 10
15 11
16 12 موٹاپے

 ٭٭سال 2020 ٭٭
نشت ماہ مضمون
17 1 سالگرہ
18 2 تازہ ترین نثرانچے
19 3 شرارتی نثرانچے
20 4
خاکہ جناب سلمان باسط کا
21 5
22 6 مداح کا خوبصورت اینکر کو جذباتی خط
23 7
24 8
25 9
26 10
27 11
28 12


 ٭ واپس ٭


کوئی تبصرے نہیں:

ایک تبصرہ شائع کریں

خیال رہے کہ "اُفق کے پار" یا میرے دیگر بلاگ کے،جملہ حقوق محفوظ نہیں ۔ !

افق کے پار
دیکھنے والوں کو اگر میرا یہ مضمون پسند آئے تو دوستوں کو بھی بتائیے ۔ آپ اِسے کہیں بھی کاپی اور پیسٹ کر سکتے ہیں ۔ ۔ اگر آپ کو شوق ہے کہ زیادہ لوگ آپ کو پڑھیں تو اپنا بلاگ بنائیں ۔